KidsOut World Stories

ليلا اور مجنون Awalkhan Ahmadzai and Emal Jabarkhail    
Previous page
Next page

ليلا اور مجنون

A free resource from

Begin reading

This story is available in:

 

 

 

 

ليلا اور مجنون 

 

a small red heart that's breaking

 

 

 

 *

 

 

 

قءیس ابن ملءؤاہ ایک جاؤان لرکا تہا جب ؤہ لیلا ال امیرا سے پیار ہوا۔

اسکؤل کا پہلا دن پرؤہ لیلا کؤ دیک کر اس پل میں پیار ہوا۔

کچ وقت کے باد ابن ملءؤاہ غزل لیکنے کے باد وہ سرکوں پر پیش کیا۔

ابن قءیس کا پیار اور جزبہ کےوجے سےسب اس کو مجنوں بولایا،یانے پاگل۔

ایک دن مجنوں لیلا کی ابو سے رشتا مانگا لیکن لیلا کی ابو مجنون کو منا کیا۔

لیلا ایک پاگل ادمی کے سات شادی نہیں کر سکتی۔ لیلا کی ابو نے اس کی رشتا کسی اور کو دیا۔

مجنون نے دل کی دوکھ مہسوس کیا۔ وہ جنگل میں میں جینا شرؤ کیا اور سارے دن اور رات لیلا کے لیے غزل لیکھا اور جنگل کی جانور کو پیش کیا۔

لیلا اپنی ابوکا بات مان کر اس ادمی کے سات شادی کیا اور ایک اچی بیوی کی فرد نبہایا لیکن اس کی دل میں سرف مجنون کے لیۓ پیار تھی۔

لیلا کی شادی کا خبر مجنون کو پہنچا جو اس کا دل کا زخم اور گہرا بنایا۔

مجنون کا والدین اس کو یاد کرتے تھے اور ہمیشا کھانا باغ میں رکھتے تھے اور دوء کرتے تھے تا کہ وہ واپس آیۓ لیکن مجنون گھر نہیں گئ۔

کچ وقت کے باد مجنون کا والدین فوت ہوا۔

لیلا کو یے خبر مجنون کو پونچنے کی کوشیش کی۔

ایک ادمی نے کہا کے وہ م مجنون جنگل میں دیکھا تو لیلا اس کو منتی کیا تاکی وہ واپس جا کر مجنون اپنے والدین کی موت کی خبردے دوں۔

جب وہ ادمی مجنون کو خبر دیا، مجنون کا ہال بدتر ہوا۔ دوکہی میں مجنون نے واداہ کیا کے وہ اپی ماوت کے تک جنگل میں رہوں گی۔

کچ سال کے باد لیلا کی شوہر فوت ہوئ تو اس نے سوچا وہ مجنون کو شادی کر سکتی لیکن بعد میں پتا چل گئ کے ایک بیواہ کم سے کم دو سال اپنی گھر میں اپنے شہر کا موت ماتم کرنا پرتا۔

یہ جان کر لیلا نے راپنی زندگی میں کوشیش کرنا چہور دیا اور ایک ٹوٹا دل سے موت ہوا اکیلی اپنی گھر میں مجنون دیکہنے کے بغر۔

لیلا کی موت کی خبر مجنون کو پہنچا۔

وہ فورن لیلا کی کبر جانے کے لیۓ سفر کیا اور پہنچنے کے باد بے شامر روئ۔

مجنون نے ایک ٹوٹا دل سے لیلا کی کبر کے پاس فوت ہوا۔

'میں دیواروں کے پاس ہوں،لیلا کی دیواروں
میں اس دیوار اور اس دیوار کو بوسہ دیتے
اس گھر کا پیار میرا دل کو نہیں لئ
مگر وہ جو اس گہر میں رہتی ہے۔'

Enjoyed this story?
Find out more here